Winamp Logo
The Urdu Poetry Podcast Cover
The Urdu Poetry Podcast Profile

The Urdu Poetry Podcast

Urdu, Arts, 3 seasons, 18 episodes, 27 minutes
About
The Urdu Poetry Podcast is the perfect way to connect with the rich tradition of Urdu poetry. From modern ghazals to timeless classics, this podcast brings you the best of Urdu poetry from the masters of the craft. Whether you’re an Urdu scholar or a beginner looking to explore the beauty of the language, this podcast is sure to bring you joy and knowledge. Tune in to experience the timeless art of Urdu poetry and immerse yourself in its wisdom. Feel free to share your opinions with me at [email protected]
Episode Artwork

Taaruf (Nun meem Rashid) - Ahsan Tirmizi

اجل، ان سے مل، کہ یہ سادہ دل نہ اہل صلوٰۃ اور نہ اہل شراب، نہ اہل ادب اور نہ اہل حساب، نا اہل کتاب نہ اہل کتاب اور نہ اہل مشین نہ اہل خلا اور نہ اہل زمین فقط بے یقین اجل، ان سے مت کر حجاب اجل، ان سے مل! بڑھو، تم بھی آگے بڑھو اجل سے ملو، بڑھو، نو تونگر گداؤ نہ کشکول دریوزہ گردی چھپاؤ تمہیں زندگی سے کوئی ربط باقی نہیں اجل سے ہنسو اور اجل کو ہنساؤ! بڑھو بندگان زمانہ بڑھو بندگان درم اجل یہ سب انسان منفی ہیں منفی زیادہ ہیں انسان کم ہو ان پر نگاہ کرم --- Send in a voice message: https://podcasters.spotify.com/pod/show/4hs4n/message
5/25/20241 minute, 36 seconds
Episode Artwork

Ek ladka (Ibn e Insha) - Ahsan Tirmizi

ایک چھوٹا سا لڑکا تھا میں جن دنوں ایک میلے میں پہنچا ہمکتا ہوا جی مچلتا تھا ایک ایک شے پر جیب خالی تھی کچھ مول لے نہ سکا لوٹ آیا لیے حسرتیں سینکڑوں ایک چھوٹا سا لڑکا تھا میں جن دنوں خیر محرومیوں کے وہ دن تو گئے آج میلہ لگا ہے اسی شان سے آج چاہوں تو اک اک دکاں مول لوں آج چاہوں تو سارا جہاں مول لوں نارسائی کا اب جی میں دھڑکا کہاں پر وہ چھوٹا سا الھڑ سا لڑکا کہاں --- Send in a voice message: https://podcasters.spotify.com/pod/show/4hs4n/message
5/20/20241 minute, 1 second
Episode Artwork

Ek dost ki khushmazaqi par (Majaz) - Ahsan Tirmizi

نظم: ہو نہیں سکتا تری اس ''خوش مذاقی'' کا جواب شام کا دل کش سماں اور تیرے ہاتھوں میں کتاب رکھ بھی دے اب اس کتاب خشک کو بالائے طاق اڑ رہا ہے رنگ و بو کی بزم میں تیرا مذاق چھپ رہا ہے پردۂ مغرب میں مہر زر فشاں دید کے قابل ہیں بادل میں شفق کی سرخیاں موجزن جوئے شفق ہے اس طرح زیر سحاب جس طرح رنگین شیشوں میں جھلکتی ہے شراب اک نگارش آتشیں ہر شے پہ ہے چھایا ہوا جیسے عارض پر عروس نو کے ہو رنگ حیا شانۂ گیتی پہ لہرانے کو ہیں گیسوئے شب آسماں میں منعقد ہونے کو ہے بزم طرب اڑ رہے ہیں جستجو میں آشیانوں کے طیور آ چلا ہے آئنے میں چاند کے ہلکا سا نور دیکھ کر یہ شام کے نظارہ ہائے دل نشیں کیا ترے دل میں ذرا بھی گدگدی ہوتی نہیں کیا تری نظروں میں یہ رنگینیاں بھاتی نہیں کیا ہوائے سرد تیرے دل کو تڑپاتی نہیں کیا نہیں ہوتی تجھے محسوس مجھ کو سچ بتا تیز جھونکوں میں ہوا کے گنگنانے کی صدا سبزہ و گل دیکھ کر تجھ کو خوشی ہوتی نہیں اف ترے احساس میں اتنی بھی رنگینی نہیں حسن فطرت کی لطافت کا جو تو قائل نہیں میں یہ کہتا ہوں تجھے جینے کا حق حاصل نہیں --- Send in a voice message: https://podcasters.spotify.com/pod/show/4hs4n/message
5/12/20241 minute, 51 seconds
Episode Artwork

Manzar (Faiz Ahmad Faiz) - Ahsan Tirmizi

Aadab! Intezaar ka bohat shukriya. Hazir hu ik nayi nazm ke saath. --- Send in a voice message: https://podcasters.spotify.com/pod/show/4hs4n/message
5/7/20241 minute, 22 seconds